HomeHeadlinesہمارے علماء اور آغا خان ڈیولپمنٹ نیٹ ورک کی تاریخ

Comments

ہمارے علماء اور آغا خان ڈیولپمنٹ نیٹ ورک کی تاریخ — 8 Comments

  1. plz.make sure that making comments accuracy and balance should be considered.For example one commentator has used the word Ulama illogically.The term Ulama is an Islamic nomenclature strictly used for those Islamic scholars who are well versed in Islamic sacred law and theology and vice versa.please

  2. Anyhow very sad to hear about it. I must say it’s not religious act but political interest. They want to keep us arogrant while making us emotional blackmail with the name of religion. As religion is the most delicated thing for every individual. As JUI has to chased vote from us.

  3. The concerns of all the respected Ulemas (Sunni Ulema, Ismaili Ulema or Kalasha Ulema) should be addressed properly and AKDN along with the local Sunni community, Ismaili and Kalasha community should forward possible solutions that is acceptable to Sunni community, Ismaili community as well as Kalasha community and repective Sunni Ulemas, Ismaili Ulemas and Kalasha Ulemas. Thanks.

  4. پہلی بات تو یہ ہے کہ احتشام صاحب، دین اسلام پر بالواسطہ طنز کی کوشش نہ کریں۔ اس سے آپ دنیاوی طور پر لبرل کا سستا نام جیتیں گے مگر اسکا کوئی بڑا فائدہ نہ ہوگا۔ ہسپتال چاہے جتنے بڑے درجے کا ہو آپکو آب حیات کوئی نہ پلائے گا۔ ١دن موت آپ ہم ہر ایک کو آئے گی ۔ آپ خود بھی الفاظ کے پہلوان ہیں غلط فہمیاں پیدا کرکے وقت پر دوڑ لگائیں گے۔ اگر کوئی فلاحی چیز متنازعہ ہے تو اسے زور زبدستی سے کیوں بنائی جائے؟
    ۔آغا خان شہزادہ اگر یہاں گلگت ہنزہ وغیرہ میں کام کرتا ہے تو اچھا ہے۔ چترال کا مزاج یہاں سے مختلف ہے۔ بلا وجہ اپنے دوسرے اداروں کو متنازعہ نہیں بنانا چاہئے۔

    • چترال سب کا ہےعوام کی فلاح کے لئے ایک ادارہ کام کرتا ہے تو اس میں رخنا ڈالنے کی کیا وجہ ہےکب تک اپ لوگ مخالفت کرتے رہیں گے

    • نرگس جبین صاحب کہوں یا صاحبہ! کچھ سمجھ نہیں آرہی ہے.
      بہر حال آپ جو بھی ہیں اپنی اصلیت دکھا کر بات کریں. مجھے اپنی اصلیت چھپانے والوں سے بات کرنے کی عادت نہیں ہے.

      دوسری اہم نات یہ ہے اگر حق بات کہنے سے کوئی لبرل یا سیکولر ہوتا ہے تو مجھے لبرل اور سیکولر ہونے پر فخر ہے.

  5. Ulama of Chitral signed a truce on 18 March 1983.This document is in the custody of security agencies. It is high time that the truce documentshould be made public.

Leave a Reply