HomeHeadlinesغلط مردم شماری کو بنیاد بنا کر چترال کی صوبائی اسمبلی کی ایک نشست کو کم کرنے کا فیصلہ کسی بھی طور پر قبول نہیں:ممبر صوبائی اسمبلی

Comments

غلط مردم شماری کو بنیاد بنا کر چترال کی صوبائی اسمبلی کی ایک نشست کو کم کرنے کا فیصلہ کسی بھی طور پر قبول نہیں:ممبر صوبائی اسمبلی — 4 Comments

  1. Not a single daleel of yours is valid Mr. MPA. You let us down. All political leadership let us down.I m from upper Chitral but I strongly oppose the division of Chitral. This division will have very bad repurcussions.

  2. مجھے یقین نہیں آتا کہ چترال کی ایک صوبائی نشت کاٹ لی جائے گی جب الیکشنز سر پر کھڑے ہوں۔ یہ غلطی مرکزی اورصوبائی حکومتوں دونوں کے حق میں نقصان دہ ہوگی۔ ایم پی اے سردار حسین کو اب بھی ہوش آیا ہو تو ہمیں شکر کرنا چاہیے۔ ہم نے مردم شماری کے دوران اس حدشے کا اظہار کیا تھا کہ چترال کی آبادی کا نصف حصہ چترال سے باہر ہے۔اگر ان کو چترال کی آبادی میں شامل نہیں کیا گیا تو ہمیں بڑا نقصان ہوگا۔ آج یہ مسلہ صرف اور صرف سردار حسین صاحب یا ان لوگوں کا نہیں جو آئیندہ انتخابات میں صوبائی اسمبلی کی سیٹ کے لیے الیکشن لڑنے کا ارادہ رکھتے ہیں بلکہ یہ اپر چترال کی ڈھائی تین لاکھ نفوس کے حق کا مسلہ ہے۔ اس موضوع کو لے کر سیاست کرنے کا خیال حماقت ہے۔ ہمیں اپنی پارٹی تعلق سے ہٹ کر بہ یک آواز اس فیصلے کی مخالفت کرنی ہے اور اپنا حق واپس لینے تک
    ایک پیلیٹ فارم یعنی “اپر چترال” سے یہ لڑائی لڑنی ہے۔ بہتر ہوگا کہ جلد از جلد آل پارٹیز میٹنگ بلائی جائے اور ایک متفقہ قرارداد کے ذریعے الیکشن کمیشن کو بتایا جائے کہ یہ ناانصافی کسی بھی صورت ہمیں قبول نہیں ہوگا اور محکمہ شماریات پر واضح کیا جائے کہ ہم چترال والے اس مردم شماری کو مسترد کرتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *