HomeCultureتھروسکی

Comments

تھروسکی — 3 Comments

  1. ڈاکٹر صاحب مہ خیالہ کولی جسمانی طورہ بوے وا،تھروسکی ذہنی طورہ ۔۔ کولی خور کوس بچے نواہچ نو بوے مگم تھروسکی ہار کوس راہہ کوتھاج تان بوے ۔

  2. کولیو چے تھروسکی .. اس قسمه لوا .. نو کولی خور تھروسکی خور بوئی؟؟

  3. تھرسکی ریکو مہ ای کندوری ہا روئے یادی ہانی ۔ کندورین تے اوا تھروسکی سارئیرو بوم مگم متے کا کہ تھووسکی سارے اسونی ہتیتان فروسک بیکو قیامتہ پت اثر غیچی نو گویان ۔۔ اوا تان ای دوستو سم ہمی مشقولگیان کوری بشاراریتام ’’ اے ژان تہ خیالہ ہیہ انسان کیہ اشناری لا ؟‘‘ جواب اریر’’ اے ژان انسان ہیہ کائناتہ کندوری کہ مخلوقات اسونی ہیتان موشی سفان سارخطرناک مخلوقو نام نو ژان ‘‘ مہ ژان! تھے انسان کی تھروسکی ہوئے تھے ہو سار نہواہچ کوروم وا کیاغ نیکی ۔ مثالو طورہ تھروسکی موش کی ای ایٹمی ملکو سربراہ ہوئے ہسے تان چیتہ بیگ سربراہ کیہ دی وختہ ملک و تباہ کوری پیسور ، مہ خیالہ اسیر صاحب اسپہ سار تقاضا کورویان کہ کہ اسپہ کم از کم ایوال ایوالیو بچے تھروسکی مو بام ۔۔ اب رہی بات لکھاری کی تو

    لکھاری نے خوب مزے سے لکھا ہے ۔ لکھاری کے ساتھ چلتے ہئوے مختلف مقامات کی سیر اور مختلف لوگوں سے ملاقاتیں ہوتی ہیں ۔ اس سفر کے دوران ایسا محسوس ہوتا ہے کہ کاش یہ سفر جاری و ساری ہی رہتا ۔ لکھاری کا ہر خیال حقیقت پر مبنی ہے ۔ بلکہ یہ کہنا مناسب ہوگا کہ لوگ سمندر کو کوذے میں بند سکرتے ہیں اور اسیر صاحب قطرے سے دجلہ بہاتے ہیں ۔ اور دجلے کو پھر کوذے میں جب بند کرتے ہیں تو قاری پر اس معجزے کا گہرا اثر ہوتا ہے ۔ یہی وجہ ہے کہ لکھاری کے ساتھ چلنا پرکیف لگتا ہے